ترتیب و توازن کا نہ توڑیں گے بھرم ہم

ابھنندن پانڈے

ترتیب و توازن کا نہ توڑیں گے بھرم ہم

ابھنندن پانڈے

MORE BY ابھنندن پانڈے

    ترتیب و توازن کا نہ توڑیں گے بھرم ہم

    اک روز صف دہر سے ہو جائیں گے کم ہم

    جذبوں کے سلگتے ہوئے خاشاک میں گم تم

    خواہش کی لرزتی ہوئی آواز اہم ہم

    اے شاخ تمنا تجھے تنہا نہیں کرتے

    خنجر تجھے پڑتے ہیں پہ ہوتے ہیں قلم ہم

    اس نے تو یوں ہی پوچھ لیا تھا کہ کوئی ہے

    محفل میں اٹھا شور بہ یک لخت کہ ہم ہم

    صحرا کے تب و تاب کی بخشش ہے کہ تو ہے

    جھٹکارتے پھرتے ہیں ان آنکھوں سے جو نم ہم

    اک خواب مچلتا ہے جو بن بن کے لہو تو

    اک درد جو بھرنے نہیں دیتا ہمیں دم ہم

    موسم بھی کچھ ایسا ہے کہ ڈھلنے نہیں دیتا

    کچھ تیرے طرف دار بھی ہیں شام الم ہم

    زنجیر گراں بار ہے شاخ رگ جاں اب

    مشکل سے چلیں گے بھی تو دو چار قدم ہم

    سینے میں دبی رکھتے ہیں بھولی ہوئی اک شکل

    پلکوں پہ اٹھا رکھتے ہیں بار‌‌ شب‌ غم ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY