Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

تصویر اضطراب سراپا بنا ہوا

شفقت کاظمی

تصویر اضطراب سراپا بنا ہوا

شفقت کاظمی

MORE BYشفقت کاظمی

    تصویر اضطراب سراپا بنا ہوا

    پھرتا ہوں شہر شہر انہیں ڈھونڈھتا ہوا

    اک درد اور وہ بھی کسی کا دیا ہوا

    اتنا بڑھا کہ آپ ہی اپنی دوا ہوا

    مل کر بچھڑ گیا تھا کوئی جس مقام پر

    اب تک اسی مقام پہ ہوں چپ کھڑا ہوا

    جیسے اسے خبر تھی مرے حال زار کی

    گزرا وہ اس ادا سے مجھے دیکھتا ہوا

    جن حادثات دہر سے بچ کر چلا تھا میں

    ہر گام پر انہیں کا مجھے سامنا ہوا

    یوں بے دلی کے ساتھ سنا ہم نے کاظمیؔ

    جیسے تھا کچھ فسانۂ ہستی سنا ہوا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے