تصویر کے خطوط وہ شہکار بولتے

عبدالغفار عزم

تصویر کے خطوط وہ شہکار بولتے

عبدالغفار عزم

MORE BYعبدالغفار عزم

    تصویر کے خطوط وہ شہکار بولتے

    سب نقش ہائے صنعت معمار بولتے ہیں

    ہم شیش گھر میں اپنا سراپا نہ پڑھ سکے

    حسرت رہی کہ آئنے اک بار بولتے

    تنہائی کو ملا ہے وہ اعجاز درد ہے

    زنداں کے دیکھیے در و دیوار بولتے

    کیا کیا نہ گھر جمال کے آباد تھے یہاں

    کس دکھ سے شہر ویراں کے آثار بولتے

    ہر بات میں اٹھاتا تھا وہ نقطۂ گماں

    ہم کیا تھے کوئی محرم اسرار بولتے

    چپ کرتی تیری بے دلی کیا عزمؔ نالوں کو

    رہتے جو ہم خموش تو اشعار بولتے

    مآخذ:

    • کتاب : اردو غزل کا مغربی دریچہ(یورپ اور امریکہ کی اردو غزل کا پہلا معتبر ترین انتخاب) (Pg. 419)
    • مطبع : کتاب سرائے بیت الحکمت لاہور کا اشاعتی ادارہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY