تیری خواہش نہ جب زیادہ تھی

نبیل احمد نبیل

تیری خواہش نہ جب زیادہ تھی

نبیل احمد نبیل

MORE BYنبیل احمد نبیل

    تیری خواہش نہ جب زیادہ تھی

    زندگی جیسے بے لبادہ تھی

    اس لیے مجھ کو مل گئی منزل

    میری خواہش مرا ارادہ تھی

    ایک تتلی جلے پروں والی

    بس وہی میرا خانوادہ تھی

    میں نے دیکھا ہے وہ نگر بھی جہاں

    روشنی کم نظر زیادہ تھی

    چل کے اک عمر مجھ پہ راز کھلا

    میری منزل ہی میرا جادہ تھی

    جس میں رہتے تھے سب محبت سے

    وہ حویلی بھی کیا کشادہ تھی

    دور تھا اس لیے محاذ سے میں

    فوج میری کہ پا پیادہ تھی

    سنگ تھا یا کہ راستے میں نبیلؔ

    کوئی دیوار ایستادہ تھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY