ترا مجنوں ہوں صحرا کی قسم ہے

ولی محمد ولی

ترا مجنوں ہوں صحرا کی قسم ہے

ولی محمد ولی

MORE BYولی محمد ولی

    ترا مجنوں ہوں صحرا کی قسم ہے

    طلب میں ہوں تمنا کی قسم ہے

    سراپا ناز ہے تو اے پری رو

    مجھے تیرے سراپا کی قسم ہے

    دیا حق حسن بالا دست تجکوں

    مجھے تجھ سرو بالا کی قسم ہے

    کیا تجھ زلف نے جگ کوں دوانا

    تری زلفاں کے سودا کی قسم ہے

    دو رنگی ترک کر ہر اک سے مت مل

    تجھے تجھ قد رعنا کی قسم ہے

    کیا تجھ عشق نے عالم کوں مجنوں

    مجھے تجھ رشک لیلیٰ کی قسم ہے

    ولیؔ مشتاق ہے تیری نگہ کا

    مجھے تجھ چشم شہلا کی قسم ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY