تجھ سے بڑھ کر کوئی پیارا بھی نہیں ہو سکتا

سلیم کوثر

تجھ سے بڑھ کر کوئی پیارا بھی نہیں ہو سکتا

سلیم کوثر

MORE BYسلیم کوثر

    تجھ سے بڑھ کر کوئی پیارا بھی نہیں ہو سکتا

    پر ترا ساتھ گوارا بھی نہیں ہو سکتا

    راستہ بھی غلط ہو سکتا ہے منزل بھی غلط

    ہر ستارا تو ستارا بھی نہیں ہو سکتا

    پاؤں رکھتے ہی پھسل سکتا ہے مٹی ہو کہ ریت

    ہر کنارا تو کنارا بھی نہیں ہو سکتا

    اس تک آواز پہنچنی بھی بڑی مشکل ہے

    اور نہ دیکھے تو اشارہ بھی نہیں ہو سکتا

    تیرے بندوں کی معیشت کا عجب حال ہوا

    عیش کیسا کہ گزارا بھی نہیں ہو سکتا

    اپنا دشمن ہی دکھائی نہیں دیتا ہو جسے

    ایسا لشکر تو صف آرا بھی نہیں ہو سکتا

    پہلے ہی لذت انکار سے واقف نہیں جو

    اس سے انکار دوبارہ بھی نہیں ہو سکتا

    حسن ایسا کہ چکا چوند ہوئی ہیں آنکھیں

    حیرت ایسی کہ نظارا بھی نہیں ہو سکتا

    چلئے وہ شخص ہمارا تو کبھی تھا ہی نہیں

    دکھ تو یہ ہے کہ تمہارا بھی نہیں ہو سکتا

    دنیا اچھی بھی نہیں لگتی ہم ایسوں کو سلیمؔ

    اور دنیا سے کنارا بھی نہیں ہو سکتا

    مأخذ :
    • کتاب : duniya aarzoo se kam hai (Pg. 91)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے