تمہارے ہجر میں رہتا ہے ہم کو غم میاں صاحب

تاباں عبد الحی

تمہارے ہجر میں رہتا ہے ہم کو غم میاں صاحب

تاباں عبد الحی

MORE BYتاباں عبد الحی

    تمہارے ہجر میں رہتا ہے ہم کو غم میاں صاحب

    خدا جانے جئیں گے یا مریں گے ہم میاں صاحب

    اگر بوسہ نہ دینا تھا کہا ہوتا نہیں دیتا

    تم اتنی بات سے ہوتے ہو کیا برہم میاں صاحب

    خطا کچھ ہم نے کی یا غیر ہے شاید تمہیں مانع

    سبب کیا ہے کہ تم آتے ہو اب کچھ کم میاں صاحب

    اگر تو شہرۂ آفاق ہے تو تیرے بندوں میں

    ہمیں بھی جانتا ہے خوب اک عالم میاں صاحب

    تمہارے عشق سے تاباںؔ ہوا ہے شہر میں رسوا

    تم اس کے حال سے اب تک نہیں محرم میاں صاحب

    مأخذ :
    • Deewan-e-Taban Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY