Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

تو گیا لیکن تری یادیں یہاں پر رہ گئیں

امردیپ سنگھ

تو گیا لیکن تری یادیں یہاں پر رہ گئیں

امردیپ سنگھ

MORE BYامردیپ سنگھ

    تو گیا لیکن تری یادیں یہاں پر رہ گئیں

    بعد تیرے بس تری باتیں زباں پر رہ گئیں

    پہلے تیری ذات کا پیکر کہیں پر گم ہوا

    اور نہ جانے پھر تری یادیں کہاں پر رہ گئیں

    آج پھر ایسا ہوا جب سوچ کر تجھ کو اے دوست

    آسماں تکتی نگاہیں آسماں پر رہ گئیں

    کیا ستم ہے کل تلک جو سامنے آنکھوں کے تھیں

    آج وہ سب صورتیں وہم و گماں پر رہ گئیں

    داستان زندگی کے حرف کب کے مٹ چکے

    کچھ لکیریں سی فقط اب داستاں پر رہ گئیں

    وقت آخر چل دیے تنہا سفر کی اور ہم

    سب کی سب چیزیں جہاں کی اس جہاں پر رہ گئیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے