الفتوں کا خدا نہیں ہوں میں

آتش اندوری

الفتوں کا خدا نہیں ہوں میں

آتش اندوری

MORE BYآتش اندوری

    الفتوں کا خدا نہیں ہوں میں

    رنج و غم سے جدا نہیں ہوں میں

    ایک عرصہ ہوا گئے اس کو

    اب تو اس کا پتا نہیں ہوں میں

    کلیوگی سوچ سے ہوں پردوشت

    کوئی تازہ ہوا نہیں ہوں میں

    خرچوں کے بوجھ نے کمر توڑی

    شوق سے کوئی جھکا نہیں ہوں میں

    بے وفا با وفا نہیں ہوگا

    عشق کی کیمیا نہیں ہوں میں

    چند سکے ہیں لوگوں کی قیمت

    شکر ہے کہ بکا نہیں ہوں میں

    دھرم اور ذات کی جکڑ ایسی

    پر تو ہیں پر اڑا نہیں ہوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY