عمر بھر بہ آسانی بار غم اٹھانے سے

جمیل الدین عالی

عمر بھر بہ آسانی بار غم اٹھانے سے

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    عمر بھر بہ آسانی بار غم اٹھانے سے

    ان پہ اعتبار آیا خود کو آزمانے سے

    اس ہجوم میں تجھ کو کیا خبر ہوئی ہوگی

    کس کو کیا تعلق تھا تیرے آستانے سے

    یوں سلام آنے پر اک خلش سی ہوتی ہے

    کاش ہم کو بلواتے وہ کسی بہانے سے

    ہاں تو ان کی خاطر سے کیوں تراوشیں کرتے

    جس طرح وہاں گزری کہہ گئے زمانے سے

    جب بھی بزم عالم میں کوئی فتنہ اٹھتا ہے

    یا تمہاری محفل سے یا غریب خانے سے

    سلسلہ یہی ہوگا رخ بدلتے جائیں گے

    میں تری حقیقت سے تو مرے فسانے سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY