عقاب دل ہو تو سارا جہان ایک سا ہے

خالد یوسف

عقاب دل ہو تو سارا جہان ایک سا ہے

خالد یوسف

MORE BY خالد یوسف

    عقاب دل ہو تو سارا جہان ایک سا ہے

    زمین کوئی بھی ہو آسمان ایک سا ہے

    کوئی ٹھکانہ وطن کا بدل نہیں ہوتا

    مہاجروں کے لئے ہر مکان ایک سا ہے

    تعینات علاقہ برادری فرقے

    سپاہ جہل کہیں ہو نشان ایک سا ہے

    وہ کوئی صاحب جاگیر ہو کہ ملا ہو

    مگر ہمارے لیے قہرمان ایک سا ہے

    نگاہ مسند اعلیٰ پہ روز اول سے

    دیار یار کا ہر پاسبان ایک سا ہے

    پناہ دامن قانون میں نہ مسجد میں

    ہمارے شہر میں ہر سائبان ایک سا ہے

    ہماری آنکھ کا تارا وہ ہو نہیں سکتا

    تمام بزم پہ جو مہربان ایک سا ہے

    فلوج و نجف و کربلا سے پہلے وہ

    سمجھ رہے تھے کہ ہر بے زبان ایک سا ہے

    ہزار بار بھی لٹ کر سبق نہیں سیکھا

    وفا کے شہر میں ہر خوش گمان ایک سا ہے

    جہاد سیف ہو خالدؔ کہ ہو جہاد قلم

    کسی زبان میں ہو امتحان ایک سا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Jugnu Tare (Pg. 44)
    • Author : Khalid Yusuf
    • مطبع : Kifayat Acadami,karachi (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY