اس کی تصویر کو سینے سے لگاتا ہی نہیں

دیپک پرجاپتی خالص

اس کی تصویر کو سینے سے لگاتا ہی نہیں

دیپک پرجاپتی خالص

MORE BYدیپک پرجاپتی خالص

    اس کی تصویر کو سینے سے لگاتا ہی نہیں

    ہاں میں وہ شخص ہوں جو عشق جتاتا ہی نہیں

    اس کو کب سے ہے توقع کی بلاؤں گا میں

    میں ہی مصروف ہوں اتنا کی بلاتا ہی نہیں

    ایک سچ یہ ہے کہ اس نے ہی کیا ہے برباد

    ایک یہ بھی ہے کہ وہ ذہن سے جاتا ہی نہیں

    میرے کمرے کی تو عادت ہے بکھر جانے کی

    میں یہی سوچ کے کمرے کو سجاتا ہی نہیں

    خوف لگتا ہے مجھے روشنی میں جانے سے

    شام کے وقت بھی میں شمع جلاتا ہی نہیں

    ہجر کے بعد سے اس نے نہ رچائی مہندی

    میں بھی اب جھٹ سے کوئی فون اٹھاتا ہی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY