وہ اپنے عشق میں کیسا کمال رکھتا ہے

رحمان خاور

وہ اپنے عشق میں کیسا کمال رکھتا ہے

رحمان خاور

MORE BYرحمان خاور

    وہ اپنے عشق میں کیسا کمال رکھتا ہے

    کہ بے رخی میں بھی میرا خیال رکھتا ہے

    جو آج میرا نہیں ہے وہ کل مرا ہوگا

    کہ ہر زمانہ عروج و زوال رکھتا ہے

    عجب نہیں وہ جہاں بھر کو بے وفا سمجھے

    نظر میں میری وفا کی مثال رکھتا ہے

    کہاں تلک کوئی دست کرم کو زحمت دے

    تمام شہر ہی دست سوال رکھتا ہے

    مری اڑان کے آگے ہے کس قدر بے بس

    یہ آسماں جو ستاروں کا جال رکھتا ہے

    ترا خیال ہی کچھ مہربان ہے ورنہ

    جہاں میں کون کسی کا خیال رکھتا ہے

    مقابل صف اعدا ہے اس طرح خاورؔ

    کہ تیغ رکھتا ہے وہ اور نہ ڈھال رکھتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY