وہ ایک شخص بہ انداز محرمانہ ملا

نبیل احمد نبیل

وہ ایک شخص بہ انداز محرمانہ ملا

نبیل احمد نبیل

MORE BYنبیل احمد نبیل

    وہ ایک شخص بہ انداز محرمانہ ملا

    ملا وہ جب بھی ہمیں ذات سے جدا نہ ملا

    ہمیں بھی اپنی جبیں کو جھکانا آتا تھا

    مگر تلاش تھی جس کی وہ نقش پا نہ ملا

    کسی کے حسن کا مضمون ہم رقم کرتے

    سو حسب حال ہمیں ایسا قافیہ نہ ملا

    وضاحتیں تو محبت میں ہم بھی کرتے مگر

    کتاب دل کا ہمیں کوئی حاشیہ نہ ملا

    اسے جفا کا جفا سے جواب کیا دیتے

    ہمیں مزاج ملا بھی تو دوستانہ ملا

    نہ تھا سرشت میں آہ و فغاں کا رنگ کوئی

    اسی لیے تو ہمیں نالۂ رسا نہ ملا

    اگر ملے تو اسے حال دل ہی کہہ دینا

    پھر اس کے بعد وہ تم سے ملا ملا نہ ملا

    مثال موج رواں سب گزرتے جاتے ہیں

    اسی لیے تو ہمیں کوئی ناخدا نہ ملا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY