وہ روئے کتابی تو ہے قرآن ہمارا

امام بخش ناسخ

وہ روئے کتابی تو ہے قرآن ہمارا

امام بخش ناسخ

MORE BYامام بخش ناسخ

    وہ روئے کتابی تو ہے قرآن ہمارا

    کہتے ہیں جسے عشق ہے ایمان ہمارا

    ہاتھوں کی شکایت ہے ہمیں دشت جنوں میں

    پاؤں میں الجھتا ہے گریبان ہمارا

    ہر صبح دکھاتا ہے ہمیں جلوہ پری کا

    بالائے ہوا دار سلیمان ہمارا

    ہیں مردم غم دیدہ کے دانتوں کی طرح بند

    مثل دہن ننگ ہے زندان ہمارا

    ہم خانہ خرابوں سے ملے کیا کوئی آ کر

    دروازۂ افتادہ ہے دربان ہمارا

    رہتا ہے ہمیں دھیان تمہارا ہی ہمیشہ

    تم کو نہیں آتا ہے کبھی دھیان ہمارا

    آ جائے ابھی جان میں جان آؤ اگر تم

    تن ہجر میں بے جان ہے اے جان ہمارا

    بے کھٹکے توحش میں نہ کیوں دوڑتے پھریے

    پہلو میں ہے بے خار بیابان ہمارا

    لی جان خدا نے کسی بت نے نہ کیا قتل

    نکلا نہ دم مرگ بھی ارمان ہمارا

    لی ہم نے بلا اپنے ہی سر سب کو بچایا

    اے جان ہے اغیار پہ احسان ہمارا

    ہر بیت میں اک شاہد معنی کی ہے تصویر

    ناسخؔ ہے مرقع نہیں دیوان ہمارا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY