وہ ساتھ آیا تو میری اڑان بیٹھ گئی

نصرت مہدی

وہ ساتھ آیا تو میری اڑان بیٹھ گئی

نصرت مہدی

MORE BYنصرت مہدی

    وہ ساتھ آیا تو میری اڑان بیٹھ گئی

    نہ جانے کیا ہوا مجھ میں تھکان بیٹھ گئی

    پھر اس کے بعد پرندے زمیں پہ گرنے لگے

    کسی کی آہ سر آسمان بیٹھ گئی

    قریب تھا کہ تعلق بحال ہو جاتا

    عجب خموشی مگر درمیان بیٹھ گئی

    حویلی چھوڑ کے سب لوگ چل دئے لیکن

    ہر ایک حجرے میں اک داستان بیٹھ گئی

    بلندیوں پہ پہنچ کر میں خوش بہت تھی مگر

    زمیں کی سمت جو دیکھا تو جان بیٹھ گئی

    زباں درازوں سے نصرتؔ کہاں تلک لڑتی

    سو دل پہ صبر کی رکھ کر چٹان بیٹھ گئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY