وہ یوں کھو کے مجھے پایا کریں گے

شکیل بدایونی

وہ یوں کھو کے مجھے پایا کریں گے

شکیل بدایونی

MORE BY شکیل بدایونی

    وہ یوں کھو کے مجھے پایا کریں گے

    مرا افسانہ دہرایا کریں گے

    ستم اپنے جو یاد آیا کریں گے

    تو دل ہی دل میں پچھتایا کریں گے

    غرور حسن کو باطل سمجھ کر

    سراپا عشق بن جایا کریں گے

    نہ ہوگی تاب ضبط غم جب ان کو

    یقیناً اشک بھر لایا کریں گے

    قیامت ہوں گی نازک دل کی آہیں

    ہر اک ذرے کو تڑپایا کریں گے

    فلک ماتم کرے گا بے کسی پر

    مہ و انجم ترس کھایا کریں گے

    مجھے ہر گام پر ٹھکرانے والے

    مجھی پر ناز فرمایا کریں گے

    نہ ہوگی جب سکوں کی کوئی صورت

    کچھ اپنے دل کو سمجھایا کریں گے

    ہر اک تدبیر جب ناکام ہوگی

    تو مجھ کو رو بہ رو پایا کریں گے

    نگاہوں سے ملا کر وہ نگاہیں

    یکایک رخ بدل جایا کریں گے

    وہی ناز و ادا کی شکل ہوگی

    اسی صورت سے شرمایا کریں گے

    میں کہتا ہی رہوں گا قصۂ غم

    وہ سنتے سنتے سو جایا کریں گے

    مگر جب ہوگا عالم عالم خواب

    نہ پا کر مجھ کو گھبرایا کریں گے

    شکیلؔ اپنے لئے لمحات فرصت

    پیام نو بہ نو لایا کریں گے

    مآخذ:

    • کتاب : Kulliyat-e-Shakiil Badaayuuni (Pg. 476)
    • Author : Shakiil Badaayuuni
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY