یاد آئے ہیں عہد جنوں کے کھوئے ہوئے دل دار بہت

علی سردار جعفری

یاد آئے ہیں عہد جنوں کے کھوئے ہوئے دل دار بہت

علی سردار جعفری

MORE BYعلی سردار جعفری

    یاد آئے ہیں عہد جنوں کے کھوئے ہوئے دل دار بہت

    ان سے دور بسائی بستی جن سے ہمیں تھا پیار بہت

    ایک اک کر کے کھلی تھیں کلیاں ایک اک کر کے پھول گئے

    ایک اک کر کے ہم سے بچھڑے باغ جہاں میں یار بہت

    حسن کے جلوے عام ہیں لیکن ذوق نظارہ عام نہیں

    عشق بہت مشکل ہے لیکن عشق کے دعویدار بہت

    زخم کہو یا کھلتی کلیاں ہاتھ مگر گلدستہ ہے

    باغ وفا سے ہم نے چنے ہیں پھول بہت اور خار بہت

    جو بھی ملا ہے لے آئے ہیں داغ دل یا داغ جگر

    وادی وادی منزل منزل بھٹکے ہیں سردارؔ بہت

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Ali Sardar Jafri Vol.II (Pg. 235)
    • Author : Ali Ahmad Fatmi
    • مطبع : Qaumi Council Baray-e-farog Urdu Zaban, New Delhi (2005)
    • اشاعت : 2005

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے