یارو کوئے یار کی باتیں کریں

اختر شیرانی

یارو کوئے یار کی باتیں کریں

اختر شیرانی

MORE BYاختر شیرانی

    یارو کوئے یار کی باتیں کریں

    پھر گل و گلزار کی باتیں کریں

    چاندنی میں اے دل اک اک پھول سے

    اپنے گل رخسار کی باتیں کریں

    آنکھوں آنکھوں میں لٹائے مے کدے

    دیدۂ سرشار کی باتیں کریں

    اب تو ملیے بس لڑائی ہو چکی

    اب تو چلئے پیار کی باتیں کریں

    پھر مہک اٹھے فضائے زندگی

    پھر گل و رخسار کی باتیں کریں

    محشر انوار کر دیں بزم کو

    جلوۂ دیدار کی باتیں کریں

    اپنی آنکھوں سے بہائیں سیل اشک

    ابر گوہربار کی باتیں کریں

    ان کو الفت ہی سہی اغیار سے

    ہم سے کیوں اغیار کی باتیں کریں

    اخترؔ اس رنگیں ادا سے رات بھر

    طالع بیدار کی باتیں کریں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY