یاس و ہراس و جور و جفا سے الگ تھلگ

راہی فدائی

یاس و ہراس و جور و جفا سے الگ تھلگ

راہی فدائی

MORE BY راہی فدائی

    یاس و ہراس و جور و جفا سے الگ تھلگ

    اک سائباں ہے قہر خدا سے الگ تھلگ

    دیکھو اٹھا ہے وہ بھی علامت کے طور پر

    دست دراز دست دعا سے الگ تھلگ

    پروانۂ ہوا و ہوس ہاں برائے شوق

    کوئی مقام شمع وفا سے الگ تھلگ

    کب تک رہے گا وحشیٔ احساس و آگہی

    نا سازگار آب و ہوا سے الگ تھلگ

    مل جائے گا حصار عزیمت کے آس پاس

    کرب سکوت آہ و بکا سے الگ تھلگ

    صد حادثات خام ہیں عبرت نگاہ میں

    تاریخ ساز جرم و سزا سے الگ تھلگ

    اس خوف سے نہ سحر بیانی پہ حرف آئے

    راہیؔ رہے ہیں چون و چرا سے الگ تھلگ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY