یہ حسن ہے جھرنوں میں نہ ہے باد چمن میں

بشر نواز

یہ حسن ہے جھرنوں میں نہ ہے باد چمن میں

بشر نواز

MORE BYبشر نواز

    یہ حسن ہے جھرنوں میں نہ ہے باد چمن میں

    جس حسن سے ہے چاند رواں نیل گگن میں

    اے کاش کبھی قید بھی ہوتا مرے فن میں

    وہ نغمۂ دلکش کہ ہے آوارہ پون میں

    اٹھ کر تری محفل سے عجب حال ہوا ہے

    دل اپنا بہلتا ہے نہ بستی میں نہ بن میں

    اک حسن مجسم کا وہ پیراہن رنگیں

    ڈھل جائے دھنک جیسے کسی چندر کرن میں

    اے نکہت آوارہ ذرا تو ہی بتا دے

    ہے تازگی پھولوں میں کہ اس شوخ کے تن میں

    دیکھا تھا کہاں اس کو ہمیں یاد نہیں ہے

    تصویر سی پھرتی ہے مگر اب بھی نین میں

    اس دور میں آساں تو نہ تھی ایسی غزل بھی

    کچھ فن ابھی زندہ ہے مگر ملک دکن میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY