یہ جو بڑھتی ہوئی جدائی ہے

جمیل الدین عالی

یہ جو بڑھتی ہوئی جدائی ہے

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    یہ جو بڑھتی ہوئی جدائی ہے

    شاید آغاز بے وفائی ہے

    تو نہ بدنام ہو اسی خاطر

    ساری دنیا سے آشنائی ہے

    کس قدر کش مکش کے بعد کھلا

    عشق ہی عشق سے رہائی ہے

    شام غم میں تو چاند ہوں اس کا

    میرے گھر کیا سمجھ کے آئی ہے

    زخم دل بے حجاب ہو کے ابھر

    کوئی تقریب رو نمائی ہے

    اٹھتا جاتا ہے حوصلوں کا بھرم

    اک سہارا شکستہ پائی ہے

    جان عالیؔ نہیں پڑی آساں

    موت رو رو کے مسکرائی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY