یہ جو ہر سمت ترے نیزے کی شہرت ہے بہت

رفیق راز

یہ جو ہر سمت ترے نیزے کی شہرت ہے بہت

رفیق راز

MORE BYرفیق راز

    یہ جو ہر سمت ترے نیزے کی شہرت ہے بہت

    سچ تو یہ ہے کہ مرے سر کی بدولت ہے بہت

    چشمۂ چشم کے پانی سے نہیں ہوگا کچھ

    خاک صحرا ہے اسے خوں کی ضرورت ہے بہت

    میں تو اک آنکھ ہوں آواز سے مجھ کو نہ ڈرا

    یہ ترے جلوۂ صد رنگ کی دہشت ہے بہت

    بت معنی بھی معانی کے پجاری بھی گئے

    آ کہ اب معبد الفاظ میں خلوت ہے بہت

    خاک ہی شہر و بیاباں کی اگر دولت ہے

    تو یہ آوارہ ترا صاحب ثروت ہے بہت

    مأخذ :
    • کتاب : Nakhl-e-Aab (Pg. 37)
    • Author : Rafeeq Raaz
    • مطبع : Takbeer Publications, Srinagar (2015)
    • اشاعت : 2015

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے