یہ میرے چاروں طرف کس لیے اجالا ہے

محسنؔ بھوپالی

یہ میرے چاروں طرف کس لیے اجالا ہے

محسنؔ بھوپالی

MORE BY محسنؔ بھوپالی

    یہ میرے چاروں طرف کس لیے اجالا ہے

    ترا خیال ہے یا دن نکلنے والا ہے

    یقین مانو میں کب کا بکھر گیا ہوتا

    تمہاری یاد نے اب تک مجھے سنبھالا ہے

    ہجوم جشن میں کرتا ہے غم زدوں کو تلاش

    مجھے جنوں نے عجب امتحاں میں ڈالا ہے

    کسی کا نام تو ہم لے کے شب میں سوتے ہیں

    کوئی تو ہے جو سحر دم جگانے والا ہے

    زمانہ ساز ڈریں گردش زمانہ سے

    ہمارا کیا ہے ہمیں حادثوں نے پالا ہے

    یہی بہت ہے کہ نقش قدم سے بچ جائیں

    سخن میں راستہ کس نے نیا نکالا ہے

    خدا کرے کہ اسے علم بھی نہ ہو محسنؔ

    وہ جس کے گرد مری چاہتوں کا ہالا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY