یوں تو کس پھول سے رنگت نہ گئی بو نہ گئی

اختر شیرانی

یوں تو کس پھول سے رنگت نہ گئی بو نہ گئی

اختر شیرانی

MORE BYاختر شیرانی

    یوں تو کس پھول سے رنگت نہ گئی بو نہ گئی

    اے محبت مرے پہلو سے مگر تو نہ گئی

    مٹ چلے میری امیدوں کی طرح حرف مگر

    آج تک تیرے خطوں سے تری خوشبو نہ گئی

    کب بہاروں پہ ترے رنگ کا سایہ نہ پڑا

    کب ترے گیسوؤں کو باد سحر چھو نہ گئی

    ترے گیسوئے معنبر کو کبھی چھیڑا تھا

    میرے ہاتھوں سے ابھی تک تری خوشبو نہ گئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY