زخم کے ہونٹ پر لعاب اس کا

عقیل عباس

زخم کے ہونٹ پر لعاب اس کا

عقیل عباس

MORE BY عقیل عباس

    زخم کے ہونٹ پر لعاب اس کا

    خوش بہت ہے مجھے خوش آب اس کا

    اس نے اپلوں پہ دیگچی رکھی

    اور پکنے لگا شباب اس کا

    عشق نے پھر کسی کو بھیجا ہے

    خیر مقدم کرے چناب اس کا

    تجھ تمنا میں جو عبادت کی

    کیا تجھے بخش دوں ثواب اس کا

    قوس پر سے عمود اٹھتا ہوا

    یعنی پھر جل اٹھا ہے خواب اس کا

    دائرہ دائرے کو چھوتا ہوا

    اور قوسین پر حجاب اس کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY