زندگانی ہنس کے طے اپنا سفر کر جائے گی

صبا اکرام

زندگانی ہنس کے طے اپنا سفر کر جائے گی

صبا اکرام

MORE BY صبا اکرام

    زندگانی ہنس کے طے اپنا سفر کر جائے گی

    یوں اجل کا معجزہ اک روز سر کر جائے گی

    کیا خبر تھی چاہ اس کی دل میں گھر کر جائے گی

    مجھ کو خود میرے ہی اندر در بدر کر جائے گی

    پہلے اپنا خوں تو بھر دوں زندگی کی مانگ میں

    جب اسے جانا ہی ٹھہرا بن سنور کر جائے گی

    پھول لے جائے گی سارے توڑ کر خوابوں کے وہ

    میری شاخ زندگی کو بے ثمر کر جائے گی

    آئے گی اک روز وہ شب کی سیاہی اوڑھ کر

    میری صبح زیست کو روشن سحر کر جائے گی

    روک لو اس درد کی دیوی سے ہیں سب رونقیں

    یہ گئی گر روٹھ کر دل کو کھنڈر کر جائے گی

    لوگ کہتے ہیں کہ وہ لڑکی سلیقہ مند ہے

    آ گئی اس گھر میں تو اس گھر کو گھر کر جائے گی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites