زندگی کارواں کا حصہ ہے

نثار ترابی

زندگی کارواں کا حصہ ہے

نثار ترابی

MORE BYنثار ترابی

    زندگی کارواں کا حصہ ہے

    ہجر کی داستاں کا حصہ ہے

    شکل بھی تو ہے عکس کی باندی

    نقش بھی تو نشاں کا حصہ ہے

    اپنا اپنا مقام ہوتا ہے

    ذرہ ذرہ جہاں کا حصہ ہے

    کس لیے مہرباں نہیں ہوتی

    کیا زمیں آسماں کا حصہ ہے

    کس لیے دے رہے ہو تاویلیں

    وہ جہاں ہے وہاں کا حصہ ہے

    پھر تو خانہ بدوشی بہتر ہے

    کہ جب اذیت مکاں کا حصہ ہے

    پھر تو ناؤ لگے کنارے بھی

    سمت اگر بادباں کا حصہ ہے

    تو ہی فکر عیاں کا مرکز بھی

    تو ہی حرف نہاں کا حصہ ہے

    لب پہ تیرے جو آ کے بکھرا ہے

    وہ بھی میرے بیاں کا حصہ ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY