ہے اب تو حسیناؤں کا حلقہ مرے آگے

نظر برنی

ہے اب تو حسیناؤں کا حلقہ مرے آگے

نظر برنی

MORE BYنظر برنی

    ہے اب تو حسیناؤں کا حلقہ مرے آگے

    سلمیٰ مرے پیچھے ہے زلیخا مرے آگے

    اب بچ کے کہاں جائے ہر اک سمت ہے دیوار

    بیوی مرے پیچھے ہے تو بچہ مرے آگے

    بے پردہ وہ کالج میں تو پھرتی ہیں برابر

    اوڑھا مری محبوب نے برقعہ مرے آگے

    میں اب کے الیکشن میں گنوا بیٹھا ضمانت

    ڈوبا مری قسمت کا ستارہ مرے آگے

    بڑھنے کی تمنا ہو تو مجھ جیسے بنو تم

    کہنے لگا صاحب کا یہ چمچہ مرے آگے

    دس بچوں کے ابا ہیں مگر ہے یہی خواہش

    ہر وقت ہی بیٹھی رہے لیلیٰ مرے آگے

    اب وہ بھی تو کہنے لگے مجھ کو نظرؔ انکل

    نکلا ہے مرادوں کا جنازہ مرے آگے

    RECITATIONS

    نظر برنی

    نظر برنی

    نظر برنی

    ہے اب تو حسیناؤں کا حلقہ مرے آگے نظر برنی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY