ہم ان کو لائے راہ پر مذاق ہی مذاق میں

عنایت علی خاں

ہم ان کو لائے راہ پر مذاق ہی مذاق میں

عنایت علی خاں

MORE BYعنایت علی خاں

    ہم ان کو لائے راہ پر مذاق ہی مذاق میں

    بنے پھر ان کے ہم سفر مذاق ہی مذاق میں

    پڑے رہے پھر ان کے گھر مذاق ہی مذاق میں

    مزے سے ہو گئی بسر مذاق ہی مذاق میں

    ہوا ہے جدے میں جو اک مزاحیہ مشاعرہ

    ہم آ گئے خدا کے گھر مذاق ہی مذاق میں

    لطیفہ گوئی کا جو رات چل پڑا تھا سلسلہ

    ابل پڑے کئی گٹر مذاق ہی مذاق میں

    اٹھو کہ اب نماز فجر کے لیے وضو کریں

    کہ رات تو گئی گزر مذاق ہی مذاق میں

    یہاں عنایتؔ آپ کو مشاعروں کی داد نے

    چڑھا دیا ہے بانس پر مذاق ہی مذاق میں

    مأخذ :
    • کتاب : Muntakhab Shahekar Mazahiya Shayari (Pg. 104)
    • Author : Roohi Kanjahi
    • مطبع : Alhamd Publications (1992)
    • اشاعت : 1992

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY