Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

جب کہ ماضی سے بہت پست بھی حال اچھا ہے

ماچس لکھنوی

جب کہ ماضی سے بہت پست بھی حال اچھا ہے

ماچس لکھنوی

MORE BYماچس لکھنوی

    جب کہ ماضی سے بہت پست بھی حال اچھا ہے

    پھر تو مستقبل رنگیں کا خیال اچھا ہے

    جس کا جو ذوق ہو اس کو وہی آتا ہے پسند

    میں تو کہتا ہوں کہ دونوں کا خیال اچھا ہے

    کچھ الیکشن میں تو کچھ نام پہ غالبؔ کے کماؤ

    اک برہمن نے کہا ہے کہ یہ سال اچھا ہے

    چارہ گر کہتے ہیں بس موت کی باقی ہے کسر

    اور ہر طرح سے بیمار کا حال اچھا ہے

    نہیں معلوم اگر سانپ کا منتر تو نہ پھنس

    ہاتھ اس سانپ کی بانبی میں نہ ڈال اچھا ہے

    جو بھی ہارے گا وہی گالیاں دے گا اس کو

    جس برہمن نے کہا ہے کہ یہ سال اچھا ہے

    ڈھونڈئیے خیر سے جا کر کوئی موٹی سسرال

    ہاتھ جو مفت میں آئے تو وہ مال اچھا ہے

    بین ہی بین گزرتے رہو اس وادی سے

    نہ حرام اچھا ہے بالکل نہ حلال اچھا ہے

    ایک ہم تھے جو سیاست میں کما پائے نہ کچھ

    ورنہ ماضی کے فقیروں کا بھی حال اچھا ہے

    جتنے ہیں دہر میں ہاتھوں کی صفائی کے کمال

    سب سے اے دوست گرہ کٹ کا کمال اچھا ہے

    جس کی بچپن ہی میں شادی ہو وہ کیا جانے غریب

    عشق میں ہجر ہے بہتر کہ وصال اچھا ہے

    اور تو کچھ بھی نہیں حضرت ماچسؔ لیکن

    آپ میں آگ لگانے کا کمال اچھا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے