جمال زادہ

MORE BYراجہ مہدی علی خاں

    مرے ننھے چاند مت رو مرے شاہزادے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    تیرا باپ میرے گھر سے مجھے ورغلا کے لایا

    ہوا وصل در جہنم جو مجھے بھگا کے لایا

    تھا جمالؔ نام اس کا اے جمال زادے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    مجھے موہنے کو جس نے کیا روز مجھ سے دنگا

    نہیں اب وہ آنے والا گیا بھاگ وہ لفنگا

    جسے میں کبھی نہ بھولوں تو اسے بھلا دے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    وہ کواڑ بند کر کے مجھے روز پیٹتا تھا

    کبھی مثل چارپائی وہ مجھے گھسیٹتا تھا

    تو اگر ہے میرا بیٹا اسے بد دعا دے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    مری چوٹیا اس نے کاٹی مری ٹانگ اس نے توڑی

    مرا کون ہے جہاں میں کہاں جاؤں میں نگوڑی

    جو میں کر چکی ہوں اس کی نہ مجھے ساز دے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    وہ جو عاشقی کے دن تھے وہ کبھی کے کٹ چکے ہیں

    مرے بک چکے ہیں زیور مرے کپڑے پھٹ چکے ہیں

    کہیں میری آہ سوزاں نہ تجھے جلا دے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    نہ لبوں پہ اب ہے سرخی نہ وہ منہ پر اب ہے غازہ

    لیے جا رہی ہے قسمت مرے عشق کا جنازہ

    کہیں حادثہ یہ پاگل نہ مجھے بنا دے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    مجھے کون آسرا دے میں ہوں شہر میں اکیلی

    نہ مرا عزیز کوئی، نہ مری کوئی سہیلی

    مرے غم کو میرے دکھ کو تو ہی آسرا دے سو جا

    تری ضد کہیں اے ظالم نہ مجھے رلا دے سو جا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے