شش جہت نہ فلک آئیں گے نظر دو بٹا تین

جوشؔ ملسیانی

شش جہت نہ فلک آئیں گے نظر دو بٹا تین

جوشؔ ملسیانی

MORE BYجوشؔ ملسیانی

    شش جہت نہ فلک آئیں گے نظر دو بٹا تین

    چھ بٹا نو کے برابر ہے اگر دو بٹا تین

    دو کھلونے جو کبھی ہم نے تپائی پہ دھرے

    آ گئے صاف مہندس کو نظر دو بٹا تین

    طالب خیر نہ ہوں گے کبھی انسان سے ہم

    نام اس کا ہے بشر اس میں ہے شر دو بٹا تین

    منحصر قوت بازو پہ ہے دولت مندی

    دیکھ لو زور میں موجود ہے زر دو بٹا تین

    ملک الموت سے دنیا میں ہراساں نہیں کون

    جس کو کہتے ہیں نڈر اس میں ہے ڈر دو بٹا تین

    بیسویں رات مہینے کی جب آ جاتی ہے

    غم میں رہ جاتا ہے گھل گھل کے قمر دو بٹا تین

    ظالمو خوف کرو آہ کو سمجھو نہ حقیر

    لفظ اللہ میں ہے اس کا اثر دو بٹا تین

    کھوٹی منزل کئے دیتی ہے تری یاد ندیم

    راہ رو کا ابھی باقی ہے سفر دو بٹا تین

    دو بٹا تین کی رکھی ہے جو اے جوشؔ ردیف

    شعر بھی نکلے ہیں مقبول نظر دو بٹا تین

    مأخذ :

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY