دلوں کے ساتھ جبینیں جو خم نہیں کرتے

افتخار عارف

دلوں کے ساتھ جبینیں جو خم نہیں کرتے

افتخار عارف

MORE BYافتخار عارف

    دلوں کے ساتھ جبینیں جو خم نہیں کرتے

    وہ پاس مدحت خیرالامم نہیں کرتے

    دعا بغیر اجازت بغیر اذن بغیر

    ہم ایک لفظ سپرد قلم نہیں کرتے

    کتاب حق نے جنہیں مصطفیٰ قرار دیا

    جز ان کے اور کوئی ذکر ہم نہیں کرتے

    کریم ایسے کہ انعام کرتے جاتے ہیں

    جواد ایسے کہ نعمت کو کم نہیں کرتے

    جو ان کے جادۂ رحمت سے منحرف ہو جائیں

    زمانے ان کو کبھی محترم نہیں کرتے

    میسر آتی ہے جن کو درود کی توفیق

    کسی بھی حال میں ہوں کوئی غم نہیں کرتے

    نظر میں طائف و مکہ رہیں تو ان کے غلام

    جواب میں بھی ستم کے ستم نہیں کرتے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے