والد کے انتقال پر

عادل منصوری

والد کے انتقال پر

عادل منصوری

MORE BY عادل منصوری

    وہ چالیس راتوں سے سویا نہ تھا

    وہ خوابوں کو اونٹوں پہ لادے ہوئے

    رات کے ریگزاروں میں چلتا رہا

    چاندنی کی چتاؤں میں جلتا رہا

    میز پر

    کانچ کے اک پیالے میں رکھے ہوئے

    دانت ہنستے رہے

    کالی عینک کے شیشوں کے پیچھے سے پھر

    موتیے کی کلی سر اٹھانے لگی

    آنکھ میں تیرگی مسکرانے لگی

    روح کا ہاتھ

    چھلنی ہوا سوئی کی نوک سے

    خواہشوں کے دیے

    جسم میں بجھ گئے

    سبز پانی کی سیال پرچھائیاں

    لمحہ لمحہ بند میں اترنے لگیں

    گھر کی چھت میں جڑے

    دس ستاروں کے سایوں تلے

    عکس دھندلا گئے

    عکس مرجھا گئے

    On the Passing of My Father

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    والد کے انتقال پر نعمان شوق

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites