آخری خواہش

احتشام اختر

آخری خواہش

احتشام اختر

MORE BYاحتشام اختر

    ٹوٹی ہوئی بوتل کی طرح

    بے کار بے مقصد

    زندگی کے طاق میں

    رکھا ہوا ہوں میں

    وہ کون تھا جو چھوڑ گیا

    میرے وجود کے شیشے پر

    اپنی لہو رنگ یادوں کے

    نشاں

    اس سے پہلے کہ بارش

    ان نشانات کو دھو ڈالے

    میں ریزہ ریزہ ہو جاؤں

    فرش پر بکھر جاؤں

    وقت کے پیروں میں چبھ جاؤں

    فرش زمیں کو رنگیں کر دوں

    اور خود بھی رنگیں ہو جاؤں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY