بد شگونی

افتخار عارف

بد شگونی

افتخار عارف

MORE BY افتخار عارف

    عجب گھڑی تھی

    کتاب کیچڑ میں گر پڑی تھی

    چمکتے لفظوں کی میلی آنکھوں میں الجھے آنسو بلا رہے تھے

    مگر مجھے ہوش ہی کہاں تھا

    نظر میں اک اور ہی جہاں تھا

    نئے نئے منظروں کی خواہش میں اپنے منظر سے کٹ گیا ہوں

    نئے نئے دائروں کی گردش میں اپنے محور سے ہٹ گیا ہوں

    صلہ جزا خوف ناامیدی

    امید امکان بے یقینی

    ہزار خانوں میں بٹ گیا ہوں

    اب اس سے پہلے کہ رات اپنی کمند ڈالے یہ چاہتا ہوں کہ لوٹ جاؤں

    عجب نہیں وہ کتاب اب بھی وہیں پڑی ہو

    عجب نہیں آج بھی مری راہ دیکھتی ہو

    چمکتے لفظوں کی میلی آنکھوں میں الجھے آنسو

    ہوا و حرص و ہوس کی سب گرد صاف کر دیں

    عجب گھڑی تھی

    کتاب کیچڑ میں گر پڑی تھی

    A BAD OMEN

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    افتخار عارف

    افتخار عارف

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    افتخار عارف

    افتخار عارف

    نعمان شوق

    بد شگونی نعمان شوق

    مآخذ:

    • Book: Harf-e-Baaryab (Pg. 27)
    • Author: IftiKHar Arif
    • مطبع: Educational Publishing House New Dehli (2004)
    • اشاعت: 2004

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY