دوام

شہاب جعفری

دوام

شہاب جعفری

MORE BY شہاب جعفری

    مجھے آج محسوس یوں ہو رہا ہے

    کہ میں مر گیا ہوں

    مرا نام کچھ بھی ہو میں عام سا آدمی

    اس سے کچھ فرق پڑتا نہیں

    ایک احساس کے مختلف نام ہیں

    ساری دنیا میں جو شخص دنیا سے اٹھا ہے وہ میں ہوں

    میں جس نے دیکھا ہے ہر شخص میں خود کو مرتے ہوئے

    مجھ کو جس طرح چاہو پکارو کہ وہ مرنے والا تو میں ہی ہوں

    لوگو شہادت سے بڑھ کر مری موت بے لوث ہے

    اور کسی کا مرے پاس کچھ بھی نہیں

    جب بھی آیا ہوں تم سب میں تم بن کے زندہ رہا

    اور دنیا سے جاتے ہوئے ساتھ صرف اپنا غم لے گیا

    غم جو دنیا میں ''میں'' بن کے پھر آئے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY