ایک ساحلی دن

نصیر احمد ناصر

ایک ساحلی دن

نصیر احمد ناصر

MORE BY نصیر احمد ناصر

    سمندر بے کرانی کا انوکھا سلسلہ ہے

    آسماں بھی اپنے نیلے پن سے اکتایا ہوا ہے

    پانیوں پر چلتے چلتے

    نم ہوا کے پاؤں بھی شل ہو چکے ہیں

    بادباں سونے لگے ہیں

    ساحلوں پر

    آفتابی غسل کرتی لڑکیاں بھی

    لوٹ کر اپنے گھروں کو جا چکی ہیں

    ریت پر پھیلے ہوئے ہیں

    ان کے قدموں کے نشاں

    جسموں کی ننگی باس

    مشروبات کے بے کار ٹن

    تصویر میں اوندھا پڑا ہے

    زندگی کی شام میں بھیگا ہوا

    اک دن!

    مآخذ:

    • کتاب : Pani mein gum khawab (Pg. 47)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY