ایکتا

MORE BYشوکت پردیسی

    INTERESTING FACT

    (مطبوعہ: یوجنا، نئی دہلی 26 فروری 1983 )

    جو ایکتا کی لگن ہو دل میں تو بے قراری نہ پاس آئے

    کسی کا جادو کسی کا ٹونا ہمارے اوپر نہیں چلے گا

    اگر ہم اپنے کو خود سمجھ لیں اگر ہم اپنے کو آپ پرکھیں

    نہ کوئی آفت کہیں اٹھے گی نہ دل دکھے گا نہ گھر جلے گا

    ہر ایک بچہ ہے ایک بچہ نہ ہے کسی کا کبھی عدو وہ

    یہ بھید بھاؤ یہ فاصلہ سب خود اپنا پیدا کیا ہوا ہے

    کسی کا مذہب نہیں یہ کہتا کہ تم نہ جینے دو دوسروں کو

    خدا تو سب کا ہے ایک لیکن مقام سجدہ جدا جدا ہے

    سنا ہے کل تک تھے وہ پڑوسی بڑا تھا آپس میں بھائی چارہ

    وہی پڑوسی تو اب بھی ہیں وہ مگر ہے آپس میں جنگ کیسی

    مٹا دو گر دل سے بھید بھاؤ تو فاصلہ پھر کوئی نہ ہوگا

    تمہیں یہ احساس خود ہی ہوگا کہ ہے دلوں میں ترنگ کیسی

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY