فاصلہ

بشر نواز

فاصلہ

بشر نواز

MORE BY بشر نواز

    نہ پھر وہ میں تھا

    نہ پھر وہ تم تھے

    نہ جانے کتنی مسافتیں درمیاں کھڑی تھیں

    اس ایک لمحے کے آئینے پر

    نہ جانے کتنے برس پریشان دھول کی طرح سے جمے تھے

    جنہیں رفاقت سمجھ کے ہم دونوں مطمئن تھے

    اس ایک لمحے کے آئینے میں

    جب اپنے اپنے نقاب الٹ کر

    خود اپنے چہروں کو ہم نے دیکھا

    تو ایک لمحہ

    وہ ایک لمحے کا آئینہ کتنی صدیوں کتنے ہزار میلوں کی شکل میں

    درمیاں کھڑا تھا

    نہ پھر وہ میں تھا نہ پھر وہ تم تھے

    بس ایک ویراں خموش صحرا بس ایک ویراں خموش صحرا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    فاصلہ نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY