گفتگو (ہند پاک دوستی کے نام)

علی سردار جعفری

گفتگو (ہند پاک دوستی کے نام)

علی سردار جعفری

MORE BYعلی سردار جعفری

    دلچسپ معلومات

    علی سردار جعفری کو اٹل بہاری واجپائی کے وفد میں شامل ہونے کے لئے لاہور آنے کی دعوت دی گئی تھی، لیکن خرابیٔ صحت کے سبب انھیں انکار کرنا پڑا۔ جعفری نے ''سرحد'' کی 10 کیسٹوں کا جوڑا واجپئی کو بھیجا تاکہ وہ پاکستان کے شاعروں اور ادیبوں کو تحفتاً محبت اور دوستی کا پیغام دیں۔ یہ نظم اسی آڈیو مجموعہ کا حصہ تھی۔

    گفتگو بند نہ ہو

    بات سے بات چلے

    صبح تک شام ملاقات چلے

    ہم پہ ہنستی ہوئی یہ تاروں بھری رات چلے

    ہوں جو الفاظ کے ہاتھوں میں ہیں سنگ دشنام

    طنز چھلکائے تو چھلکایا کرے زہر کے جام

    تیکھی نظریں ہوں ترش ابروئے خم دار رہیں

    بن پڑے جیسے بھی دل سینوں میں بیدار رہیں

    بے بسی حرف کو زنجیر بہ پا کر نہ سکے

    کوئی قاتل ہو مگر قتل نوا کر نہ سکے

    صبح تک ڈھل کے کوئی حرف وفا آئے گا

    عشق آئے گا بصد لغزش پا آئے گا

    نظریں جھک جائیں گی دل دھڑکیں گے لب کانپیں گے

    خامشی بوسۂ لب بن کے مہک جائے گی

    صرف غنچوں کے چٹکنے کی صدا آئے گی

    اور پھر حرف و نوا کی نہ ضرورت ہوگی

    چشم و ابرو کے اشاروں میں محبت ہوگی

    نفرت اٹھ جائے گی مہمان مروت ہوگی

    ہاتھ میں ہاتھ لیے سارا جہاں ساتھ لیے

    تحفۂ درد لیے پیار کی سوغات لیے

    ریگزاروں سے عداوت کے گزر جائیں گے

    خوں کے دریاؤں سے ہم پار اتر جائیں گے

    گفتگو بند نہ ہو

    بات سے بات چلے

    صبح تک شام ملاقات چلے

    ہم پہ ہنستی ہوئی یہ تاروں بھری رات چلے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    گفتگو (ہند پاک دوستی کے نام) نعمان شوق

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY