ہمارا وطن

عرش ملسیانی

ہمارا وطن

عرش ملسیانی

MORE BYعرش ملسیانی

    دلچسپ معلومات

    (1938ء)

    پھلوں سے لدے جس کے اشجار ہیں

    مہکتے ہوئے جس کے گلزار ہیں

    نرالی ہے جس کے گلوں کی پھبن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    گلاب اور جوہی کی جس میں بہار

    سمن ہے جہاں ہر چمن کا سنگار

    کھلے ہیں جہاں نرگس و نسترن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    ہے پورب سے پچھم نرالا جہاں

    ہے اتر کا دولہا ہمالہ جہاں

    کماری جہاں ہے عروس دکن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    کہیں گومتی بیاس گوداوری

    کہیں گھاگھرا نربدا تاپتی

    کہیں جس میں بہتے ہیں گنگ و جمن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    ہر اک پھل ہر اک پھول ہر رت جہاں

    ہواؤں میں جس کی ہے عنبر نہاں

    فضائیں ہیں جس کی چمن در چمن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    پپیہا الاپے جہاں پی کہاں

    سنائیں عنادل ترانے جہاں

    ہے آموں میں کوئل جہاں نغمہ زن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    اناج اور میووں کی کثرت جہاں

    ہے پانی میں بھی اک حلاوت جہاں

    جو ہم کو بناتا ہے شیریں سخن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    کیا جس کی مٹی نے پیدا ہمیں

    نہ کیوں فخر سے اس کا ہم نام لیں

    کہیں مل کے سب شیخ اور برہمن

    ہمارا وطن ہے ہمارا وطن

    ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Arsh (Pg. 260)
    • Author : Arsh Malsiyani
    • مطبع : Ali Imran Chaudhary

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY