حسرت

MORE BYاحتشام اختر

    خالی گلاس کے مقدر میں

    ہونٹوں کا لمس ہاتھوں کی نرمی کہاں

    شبنم روتی ہے اسے فنا کا غم ہے

    لمس کی قیمت کا احساس نہیں ہے اس کو

    پھولوں کی آغوش میں موت بھی

    حسین ہو جاتی ہے زندگی کی طرح

    خوش قسمت ہیں وہ لفافے

    جن پر ثبت ہوتی ہے مہر

    حسین لبوں کی

    مجھے بھی کوئی چھولے

    مجھے بھی کوئی پی لے

    میں پھر ٹوٹ پھوٹ جاؤں گا

    خالی گلاس کے مقدر میں مگر

    ہونٹوں کا لمس ہاتھوں کی نرمی کہاں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY