ادھر بھی آ

اسرار الحق مجاز

ادھر بھی آ

اسرار الحق مجاز

MORE BY اسرار الحق مجاز

    یہ جہد و کشمکش یہ خروش جہاں بھی دیکھ

    ادبار کی، سروں پہ گھنی بدلیاں بھی دیکھ

    یہ توپ یہ تفنگ یہ تیغ و سنان بھی دیکھ

    او کشتۂ نگار دل آرا ادھر بھی آ

    آ، اور بگل کا نغمۂ ''جاں آفریں'' بھی سن

    آ، بے کسوں کا نالۂ اندوہ کیں بھی سن

    آ، باغیوں کا زمزمۂ آتشیں بھی سن

    او مست ساز و بربط و نغمہ ادھر بھی آ

    تقدیر کچھ ہو، کاوش تدبیر بھی تو ہے

    تخریب کے لباس میں تعمیر بھی تو ہے

    ظلمات کے حجاب میں تنویر بھی تو ہے

    آ منتظر ہے عشرت فردا ادھر بھی آ

    مآخذ:

    • Book : Aahang (Pg. 131)
    • Author : Asrar-ul-Haq Majaz
    • مطبع : National Council for Promotion of Urdu Language, Delhi (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY