میں سن نہیں سکتا

احتشام اختر

میں سن نہیں سکتا

احتشام اختر

MORE BYاحتشام اختر

    زندگی

    بس کی قطار کے عشق کی طرح

    سطحی سہی لیکن

    بے کیف نہیں

    زندگی دل کش ہے

    شہر کے ہنگاموں کی طرح

    میں ہنگاموں کا

    دل دادہ ہوں

    خموشی سے نفرت ہے مجھے

    کہ میں خاموشی میں

    بیتے کل کی ٹک ٹک

    گھڑی کی طرح

    سن نہیں سکتا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY