مجید امجدؔ کے لئے

ابرار احمد

مجید امجدؔ کے لئے

ابرار احمد

MORE BY ابرار احمد

    تم آتے ہو دور دیس سے

    دور دیس سے آنے والوں پر

    ہر کوئی ہنستا ہے

    دل ڈرتا ہے

    جب سرد ہوا کے آنچل میں

    منہ ڈھانپ پرندے سوتے ہیں

    جب شام ڈھلے دیواروں پر

    کچھ سائے گڈمڈ ہوتے ہیں

    کچھ شکلیں رنگ جماتی ہیں

    اجڑی اجڑی دہلیزوں پر

    خاموشی دستک دیتی ہے

    اور بند کواڑوں کی تنہائی

    ہر سو خاک اڑاتی ہے

    اس لمحے کوئی

    دل میں کروٹ لیتا ہے

    جب وقت کے کاہل ماتھے پر

    ناموں کی بوندیں گرتی ہیں

    مٹی میں خوشبو گھولتی ہیں

    ہر پھول کے دل میں

    آتی رت کا دھڑکا جاگنے لگتا ہے

    تب دھیان میں جانے کس بستی سے

    دھیمے دھیمے قدموں کی آواز سنائی دیتی ہے

    تم آتے ہو

    تم آؤ گے

    دل ڈرتا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Aakhrii Din Se pehle (Pg. 67)
    • Author : Abrar Ahmed
    • مطبع : Tahir Aslam Gora, Gora Publishers (1997)
    • اشاعت : 1997

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY