Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

مریض محبت

جمیلؔ مظہری

مریض محبت

جمیلؔ مظہری

MORE BYجمیلؔ مظہری

    اپنے پندار خودی سے منفعل ہوں مظہریؔ

    میں ظہور اختلال آب و گل ہوں مظہریؔ

    کہ محبت کا مریض مستقل ہوں مظہریؔ

    دوستی کیا دشمنی سے بھی محبت میں نے کی

    روشنی کیا تیرگی سے بھی محبت میں نے کی

    مسکرائی تیرگی مجھ کو محبت ہو گئی

    ہنس کے بولی دشمنی مجھ کو محبت ہو گئی

    مفلسی و بے نوائی سے محبت میں نے کی

    ہر سرور خود نمائی سے محبت میں نے کی

    ہر غرور کبریائی سے محبت میں نے کی

    بے رخی و کج ادائی سے محبت میں نے کی

    تر زباں ہو کر رکھائی سے محبت میں نے کی

    تھا رجائی کس قدر میری محبت کا دماغ

    اہرمن کے سینۂ تاریک میں دیکھا چراغ

    اک ستارستاں نظر آیا اندھیرا داغ داغ

    میں نے مکاری و عیاری میں بھی دیکھا خلوص

    میں صیادی و جلادی سے بھی برتا خلوص

    میں نے قہاری و جباری میں بھی ڈھونڈا خلوص

    اپنے اس جذبے کو اک تشدید ایمانی بھی دی

    دوستوں کے واسطے ایماں کی قربانی بھی دی

    تاکہ پوری ہو محبت کی اک امید فضول

    بارہا جھونکا کیا انصاف کی آنکھوں میں دھول

    پھر بھی سب کچھ کھو کے سب کچھ دے کے کچھ پایا نہیں

    عقل کام آئی نہیں اور عشق راس آیا نہیں

    جس کو کہتے ہیں وفا اک سخت بیماری ہے یہ

    خودکشی ہو یا نہ ہو لیکن خود آزاری ہے یہ

    ناز برداری میں بھی اک بار برداری ہے یہ

    میں محبت کی ہوس میں اتنا بے خود ہو گیا

    میرے اندر مادہ نفرت کا بالکل سو گیا

    اے عزیزو! اس مریض زندگی کا کیا علاج

    اس خودی کا کیا علاج اس بے خودی کا کیا علاج

    جس کو ہو ناز وفا اس آدمی کا کیا علاج

    اجتبیٰؔ سے پوچھتے ہو مظہریؔ کا کیا علاج

    سو خلوص بے ریا کا اک خباثت سے علاج

    یہ مرض ہے، یہ مرض ہے اس کا نفرت ہے علاج

    بس یہی راز شفا ہے، بس یہی راز شفا

    بس یہی میری دوا ہے بس یہی میری دوا

    کوئی میری روح پر ایسا کرے ظلم شدید

    مجھ میں نفرت جی اٹھے صلوٰۃ بر روح یزید

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے