متاع الفاظ

زہرا نگاہ

متاع الفاظ

زہرا نگاہ

MORE BYزہرا نگاہ

    یہ جو تم مجھ سے گریزاں ہو مری بات سنو

    ہم اسی چھوٹی سی دنیا کے کسی رستے پر

    اتفاقا کبھی بھولے سے کہیں مل جائیں

    کیا ہی اچھا ہو کہ ہم دوسرے لوگوں کی طرح

    کچھ تکلف سے سہی ٹھہر کے کچھ بات کریں

    اور اس عرصۂ اخلاق و مروت میں کبھی

    ایک پل کے لئے وہ ساعت نازک آ جائے

    ناخن لفظ کسی یاد کے زخموں کو چھوئے

    اک جھجکتا ہوا جملہ کوئی دکھ دے جائے

    کون جانے گا کہ ہم دونوں پہ کیا بیتی ہے

    اس خموشی کے اندھیروں سے نکل آئیں چلو

    کسی سلگے ہوئے لہجے سے چراغاں کر لیں

    چن لیں پھولوں کی طرح ہم بھی متاع الفاظ

    اپنے اجڑے ہوئے دامن کو گلستاں کر لیں

    چن لیں پھولوں کی طرح ہم بھی متاع الفاظ

    دولت درد بڑی چیز ہے اقرار کرو

    نعمت غم بڑی نعمت ہے یہ اظہار کرو

    لفظ پیمان بھی اقرار بھی اظہار بھی ہیں

    طاقت صبر اگر ہو تو یہ غم خوار بھی ہیں

    ہاتھ خالی ہوں تو یہ جنس گراں بار بھی ہیں

    پاس کوئی بھی نہ ہو پھر تو یہ دل دار بھی ہیں

    ہاتھ خالی ہوں تو یہ جنس گراں بار بھی ہیں

    یہ جو تم مجھ سے گریزاں ہو مری بات سنو

    یہ جو تم مجھ سے گریزاں ہو مری بات سنو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY