ریختہ

برقی اعظمی

ریختہ

برقی اعظمی

MORE BYبرقی اعظمی

    ریختہ جس کا بڑا نام ہے کیا عرض کروں

    یہ ہمارے لئے انعام ہے کیا عرض کروں

    فال نیک اس کا ہے اردو کے لئے اپنا وجود

    جس کا فیضان نظر عام ہے کیا عرض کروں

    آپ خود دیکھ لیں کہنے پہ نہ جائیں میرے

    وہ بھی اس میں ہے جو گمنام ہے کیا عرض کروں

    میرا مجموعۂ اشعار ہے اس کی زینت

    بادۂ شوق کا یہ جام ہے کیا عرض کروں

    اپنی میراث ادب کرتے ہیں کیسے محفوظ

    اس کا سب کے لئے پیغام ہے کیا عرض کروں

    کسی مسلم کو نہ دی اس کی خدا نے توفیق

    آپ بھی دیکھ لیں کیا کام ہے کیا عرض کروں

    یہ کتب خانۂ معروف ادب کا برقیؔ

    ایسی اک جلوہ گہ عام ہے کیا عرض کروں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY